Latest

بھارت، پاکستان کی فتح پر جشن منانے والے 67 کشمیری طلبہ کے خلاف بغاوت کا مقدمہ واپس

بھارت، پاکستان کی فتح پر جشن منانے والے 67 کشمیری طلبہ کے خلاف بغاوت کا مقدمہ واپس
نئی دہلی،اسلام آباد(جنگ نیوز) بھارت نے ایشیاکپ کرکٹ ٹورنامنٹ میں پاکستان کرکٹ ٹیم کی فتح پر جشن منانے والے میرٹھ یونیورسٹی کے 67 کشمیری طلبہ کےخلاف بغاوت کا مقدمہ خارج کردیا تاہم ان کےخلاف نفرت پھیلانے اور شر انگیزی کے تحت مقدمہ چلایا جائےگا۔ان طلبہ کو تین روز کےلیے معطل کردیا گیا ہے۔دوسری جانب پاکستان نے کشمیری طلبہ کو پاکستان کی جیت کا جشن منانے پر معطل کیے جانے اور مقدمہ درج کرنے پر اپنے ردعمل میں کہا کہ کشمیری طلبہ کےلیے پاکستان کے دل اور تعلیمی ادارے کھلے ہیں جبکہ حریت رہنما یٰسین ملک نے کشمیری طلبہ پر غداری کا مقدمہ درج کرانے کو بدقسمتی قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ طلبہ پر تشدد، یونیورسٹی سے نکالے جانے اور اب ان کے خلاف بغاوت کے مقدمے سے سیکولر بھارت کا اصل چہرہ سامنے آگیا۔ تفصیلات کے مطابق جمعرات کو بھارتی میڈیا کے مطابق ایشیاء کپ میں بھارت کے خلاف پاکستان کی جیت کا جشن منانے والے میرٹھ یونیورسٹی کے کشمیری طلبہ معطل کیے جانے کے بعد یو پی حکومت نے تنگ نظری کا مظاہرہ کرتے ہوئے 67 کشمیری طلبہ کے خلاف بغاوت ، شر انگیزی اور نفرت پھیلانے کے الزمات کے تحت مقدمہ درج کیا تھا تاہم قانونی مشاورت کے بعد یوپی کی حکومت نے بغاوت کا الزام خارج کردیا۔ پاکستان نے بھارت کی جانب سے پاکستانی فتح پر جیت کا جشن منانے والے کشمیری طلبہ پر تشدد اور مقدمے کے اندراج کی سخت مذمت کرتے ہو ئے کہا کہ کسی مہذ ب ملک کو یہ رویہ زیب نہیں دیتا ۔ کشمیری طلبہ کےلیے ہمارے دل اور تعلیمی ادارے کھلے ہیں۔پاکستان کی فتح کا جشن منانے پر کشمیری طلبہ کو غدار کہنا افسوسناک ہے۔