Latest

بے خوف و خطر کام جاری رکھیں گے، حالات جیسے بھی ہوں مشرف کو 11 مارچ کو پیش ہونا پڑے گا، خصوصی عدالت

بے خوف و خطر کام جاری رکھیں گے، حالات جیسے بھی ہوں مشرف کو 11 مارچ کو پیش ہونا پڑے گا، خصوصی عدالت
اسلام آباد(ایجنسیاں ، جنگ نیوز) خصوصی عدالت میں مشرف غداری کیس کی سماعت کل تک ملتوی کردی گئی ہے، آئندہ سماعت پرججزکے متعصب ہونے سے متعلق درخواستوں پر فیصلہ سنایا جائے گاجبکہ مشر ف کے وکلا ء کا دورا ن سما عت کہنا تھا کہ خصوصی عدالت پر بھی دہشتگردوں کی جانب سے حملہ کیا جاسکتا ہے اور اس حملے میں تین ججز سمیت ایک پراسکیوٹر اور دو وکلاء صفائی نشانہ بنیں گےاور اس حملے کا مقدمہ بھی مشرف کیخلاف درج کرایا جائیگا جس پر جسٹس فیصل عرب نے ریمارکس دیے کہ حالات جیسے بھی ہوں مشرف کو11مارچ کو پیش ہونا پڑے گا۔ کسی خطرے کی وجہ سے کیس کی فائل بند کرکے ریکارڈ روم کی نظرنہیں کرسکتے، ہمیں اپنی ذمے داریوں کا احساس ہے۔ ہم جان کے خطرے کے باعث اپنا کام نہیں چھوڑ سکتے عدالتیں ہر قسم کے حالات میں اپنا کام بے خوف و خطر جاری رکھتی ہیں۔ بدھ کے روز جسٹس فیصل عرب کی سربراہی میں خصوصی عدالت کے تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی سماعت کے آغاز سے قبل استغاثہ ٹیم کے سربراہ اکرم شیخ نے ایف ایٹ کچہری میں جاں بحق ہونیوالے افراد کیلئے دعا کرائی جس کے بعد انور منصور نے کہا کہ عدالت کو کسی محفوظ جگہ منتقل کیا جائے اور اس حوالے سے درخواست دائر ہوئی ہے کیونکہ ان کو جان لیوا دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ سابق صدر کے وکیل احمد رضا قصوری نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ کالعدم تحریک طالبان نے مجھے، انورمنصورایڈووکیٹ اورشریف الدین پیرزادہ کو پرویز مشرف کیس سے علیحدہ ہونے کیلئے دھمکیاں دی ہیں، ہم ان حالات میں کیس کی پیروی نہیں کرسکتے، عدالت کو کسی محفوظ جگہ منتقل کرنے کی درخواست دائر کر رکھی ہے تحریک طالبان کی جانب سے ملنے والا خط خود عدالت کو پیش کیا اور کہا کہ ٹی ٹی پی کے خط میں مشرف کے وکلاء انور منصور، شریف الدین پیرزادہ اور انہیں سپریم کورٹ کے پتہ پر خط موصول ہو ا ہے جس میں کہا گیاکہ مشرف کے کیس سے علیحدہ ہوجائو ورنہ سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔