Latest

داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار

داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار
اسلام آباد (اے پی پی،این این آئی) وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر محمد اسحق ڈارنے کہا ہے کہ داسو پاور پراجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے، امریکا کے ساتھ تجارت کو فروغ دینے کےلیے ٹیکسٹائل پر خصوصی توجہ دینا ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے افغان ہم منصب سے ٹیلی فون پر گفتگو اور اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ محمد اسحق ڈار سے افغانستان کے وزیر خزانہ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے ٹیلی فون پر بات کی جس میں دونوں ممالک کی مختلف مسائل پر گفتگو کی گئی اور گزشتہ ماہ فروری 22 تا 24 کے دوران افغان وزیر خزانہ کے دورہ پاکستان کے فالواپ کا جائزہ لیا گیا۔ وزیر خزانہ اسحق ڈار نے داسو ہائیڈل پاور پراجیکٹ پر پاکستانی موقف کی وضاحت کی اور اپنے افغان ہم منصب کو بتایا کہ منصوبہ دریائے کابل کی بجائے دریائے سندھ پر تعمیر کیا جا رہا ہے، اسلئے اس منصوبہ پر افغانستان کو کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے وزیر خزانہ کو یقین دلایا کہ وہ اس معاملہ کا جائزہ لیں گے اور کہاکہ جس دریا پر منصوبہ تعمیر کیا جا رہا ہے اگر افغانستان منصوبہ کی جگہ سے اوپر یا نیچے دریا سے پانی کا استعمال نہیں کرتا تو اس کو اس منصوبہ پر کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ شاہد افغان نیشنل سکیورٹی کونسل نے منصوبہ کے مقام کے حوالے سے کسی غلط فہمی کے نتیجہ میں اس پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہو۔وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے امریکا کے ساتھ تجارت کے فروغ کےلیے ٹیکسٹائل برآمدات پرخصوصی توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت پر زوردیتے ہوئے کہاہے کہ اہم تجارتی شراکت دار کے ساتھ تعلقات میں وسعت کےلیے زیادہ سے زیادہ مواقع تلاش کیے جائیں۔


داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار

داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار
اسلام آباد (اے پی پی،این این آئی) وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر محمد اسحق ڈارنے کہا ہے کہ داسو پاور پراجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے، امریکا کے ساتھ تجارت کو فروغ دینے کےلیے ٹیکسٹائل پر خصوصی توجہ دینا ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے افغان ہم منصب سے ٹیلی فون پر گفتگو اور اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ محمد اسحق ڈار سے افغانستان کے وزیر خزانہ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے ٹیلی فون پر بات کی جس میں دونوں ممالک کی مختلف مسائل پر گفتگو کی گئی اور گزشتہ ماہ فروری 22 تا 24 کے دوران افغان وزیر خزانہ کے دورہ پاکستان کے فالواپ کا جائزہ لیا گیا۔ وزیر خزانہ اسحق ڈار نے داسو ہائیڈل پاور پراجیکٹ پر پاکستانی موقف کی وضاحت کی اور اپنے افغان ہم منصب کو بتایا کہ منصوبہ دریائے کابل کی بجائے دریائے سندھ پر تعمیر کیا جا رہا ہے، اسلئے اس منصوبہ پر افغانستان کو کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے وزیر خزانہ کو یقین دلایا کہ وہ اس معاملہ کا جائزہ لیں گے اور کہاکہ جس دریا پر منصوبہ تعمیر کیا جا رہا ہے اگر افغانستان منصوبہ کی جگہ سے اوپر یا نیچے دریا سے پانی کا استعمال نہیں کرتا تو اس کو اس منصوبہ پر کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ شاہد افغان نیشنل سکیورٹی کونسل نے منصوبہ کے مقام کے حوالے سے کسی غلط فہمی کے نتیجہ میں اس پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہو۔وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے امریکا کے ساتھ تجارت کے فروغ کےلیے ٹیکسٹائل برآمدات پرخصوصی توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت پر زوردیتے ہوئے کہاہے کہ اہم تجارتی شراکت دار کے ساتھ تعلقات میں وسعت کےلیے زیادہ سے زیادہ مواقع تلاش کیے جائیں۔


داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار

داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار
اسلام آباد (اے پی پی،این این آئی) وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر محمد اسحق ڈارنے کہا ہے کہ داسو پاور پراجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے، امریکا کے ساتھ تجارت کو فروغ دینے کےلیے ٹیکسٹائل پر خصوصی توجہ دینا ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے افغان ہم منصب سے ٹیلی فون پر گفتگو اور اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ محمد اسحق ڈار سے افغانستان کے وزیر خزانہ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے ٹیلی فون پر بات کی جس میں دونوں ممالک کی مختلف مسائل پر گفتگو کی گئی اور گزشتہ ماہ فروری 22 تا 24 کے دوران افغان وزیر خزانہ کے دورہ پاکستان کے فالواپ کا جائزہ لیا گیا۔ وزیر خزانہ اسحق ڈار نے داسو ہائیڈل پاور پراجیکٹ پر پاکستانی موقف کی وضاحت کی اور اپنے افغان ہم منصب کو بتایا کہ منصوبہ دریائے کابل کی بجائے دریائے سندھ پر تعمیر کیا جا رہا ہے، اسلئے اس منصوبہ پر افغانستان کو کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے وزیر خزانہ کو یقین دلایا کہ وہ اس معاملہ کا جائزہ لیں گے اور کہاکہ جس دریا پر منصوبہ تعمیر کیا جا رہا ہے اگر افغانستان منصوبہ کی جگہ سے اوپر یا نیچے دریا سے پانی کا استعمال نہیں کرتا تو اس کو اس منصوبہ پر کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ شاہد افغان نیشنل سکیورٹی کونسل نے منصوبہ کے مقام کے حوالے سے کسی غلط فہمی کے نتیجہ میں اس پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہو۔وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے امریکا کے ساتھ تجارت کے فروغ کےلیے ٹیکسٹائل برآمدات پرخصوصی توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت پر زوردیتے ہوئے کہاہے کہ اہم تجارتی شراکت دار کے ساتھ تعلقات میں وسعت کےلیے زیادہ سے زیادہ مواقع تلاش کیے جائیں۔


داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار

داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار
اسلام آباد (اے پی پی،این این آئی) وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر محمد اسحق ڈارنے کہا ہے کہ داسو پاور پراجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے، امریکا کے ساتھ تجارت کو فروغ دینے کےلیے ٹیکسٹائل پر خصوصی توجہ دینا ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے افغان ہم منصب سے ٹیلی فون پر گفتگو اور اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ محمد اسحق ڈار سے افغانستان کے وزیر خزانہ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے ٹیلی فون پر بات کی جس میں دونوں ممالک کی مختلف مسائل پر گفتگو کی گئی اور گزشتہ ماہ فروری 22 تا 24 کے دوران افغان وزیر خزانہ کے دورہ پاکستان کے فالواپ کا جائزہ لیا گیا۔ وزیر خزانہ اسحق ڈار نے داسو ہائیڈل پاور پراجیکٹ پر پاکستانی موقف کی وضاحت کی اور اپنے افغان ہم منصب کو بتایا کہ منصوبہ دریائے کابل کی بجائے دریائے سندھ پر تعمیر کیا جا رہا ہے، اسلئے اس منصوبہ پر افغانستان کو کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے وزیر خزانہ کو یقین دلایا کہ وہ اس معاملہ کا جائزہ لیں گے اور کہاکہ جس دریا پر منصوبہ تعمیر کیا جا رہا ہے اگر افغانستان منصوبہ کی جگہ سے اوپر یا نیچے دریا سے پانی کا استعمال نہیں کرتا تو اس کو اس منصوبہ پر کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ شاہد افغان نیشنل سکیورٹی کونسل نے منصوبہ کے مقام کے حوالے سے کسی غلط فہمی کے نتیجہ میں اس پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہو۔وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے امریکا کے ساتھ تجارت کے فروغ کےلیے ٹیکسٹائل برآمدات پرخصوصی توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت پر زوردیتے ہوئے کہاہے کہ اہم تجارتی شراکت دار کے ساتھ تعلقات میں وسعت کےلیے زیادہ سے زیادہ مواقع تلاش کیے جائیں۔


داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار

داسو پاور پروجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہئے، اسحاق ڈار
اسلام آباد (اے پی پی،این این آئی) وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر محمد اسحق ڈارنے کہا ہے کہ داسو پاور پراجیکٹ دریائے سندھ پر ہے، افغانستان کو اعتراض نہیں ہونا چاہیے، امریکا کے ساتھ تجارت کو فروغ دینے کےلیے ٹیکسٹائل پر خصوصی توجہ دینا ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے افغان ہم منصب سے ٹیلی فون پر گفتگو اور اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ محمد اسحق ڈار سے افغانستان کے وزیر خزانہ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے ٹیلی فون پر بات کی جس میں دونوں ممالک کی مختلف مسائل پر گفتگو کی گئی اور گزشتہ ماہ فروری 22 تا 24 کے دوران افغان وزیر خزانہ کے دورہ پاکستان کے فالواپ کا جائزہ لیا گیا۔ وزیر خزانہ اسحق ڈار نے داسو ہائیڈل پاور پراجیکٹ پر پاکستانی موقف کی وضاحت کی اور اپنے افغان ہم منصب کو بتایا کہ منصوبہ دریائے کابل کی بجائے دریائے سندھ پر تعمیر کیا جا رہا ہے، اسلئے اس منصوبہ پر افغانستان کو کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہیے۔ ڈاکٹر عمر ذخلوال نے وزیر خزانہ کو یقین دلایا کہ وہ اس معاملہ کا جائزہ لیں گے اور کہاکہ جس دریا پر منصوبہ تعمیر کیا جا رہا ہے اگر افغانستان منصوبہ کی جگہ سے اوپر یا نیچے دریا سے پانی کا استعمال نہیں کرتا تو اس کو اس منصوبہ پر کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ شاہد افغان نیشنل سکیورٹی کونسل نے منصوبہ کے مقام کے حوالے سے کسی غلط فہمی کے نتیجہ میں اس پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہو۔وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے امریکا کے ساتھ تجارت کے فروغ کےلیے ٹیکسٹائل برآمدات پرخصوصی توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت پر زوردیتے ہوئے کہاہے کہ اہم تجارتی شراکت دار کے ساتھ تعلقات میں وسعت کےلیے زیادہ سے زیادہ مواقع تلاش کیے جائیں۔