Latest

نواز شریف کا طالبان سے مذاکرات کیلئے نئی ٹیم کی تشکیل پر غور

نواز شریف کا طالبان سے مذاکرات کیلئے نئی ٹیم کی تشکیل پر غور
اسلام آباد( رپورٹ/ طارق بٹ ) وزیراعظم نواز شریف نے طالبان سے مذاکرات کیلئے نئی ٹیم کی تشکیل پر غور شروع کر دیا ہے ۔ بات چیت کا دوسرا نازک مرحلہ وزیراعظم کی جانب سے اعلیٰ فوجی قیادت سے مشاورت کے بعد نئی جامع مذاکراتی ٹیم کی تشکیل کے بعد شروع ہوگا، اس طرح عرفان صدیقی کی قیادت میں موجودہ حکومتی کمیٹی کا مستقبل غیر یقینی ہوگیا ہے ۔ نئی کمیٹی میں گورنر اور وزیراعلیٰ خیبر پختون خوا کو بھی شامل کئے جانے کا امکان ہے جبکہ وزیر اعظم اور وزیر داخلہ پس پردہ محرک ہوں گے ، اس طرح حکومت خیبر پختونخوا کے یہ تحفظات بھی دور ہو جائیں گے کہ اسے مذاکراتی امن عمل میں شامل نہیں رکھا گیا ۔ معتبر ذرائع کے مطابق اس بات پر مکمل اتفاق رائے موجود ہے کہ وزیراعظم نواز شریف اور نہ ہی وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان براہ راست مذاکراتی عمل میں شامل ہوں گے ، تاہم ماضی کی طرح دونوں مذاکرات پر گہری نظر رکھیں گے ۔ نئی کمیٹی مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والی حکومتی شخصیات پر مشتمل ہوگی جو مذاکرات کے دوران موقع پر ہی فیصلے کرنے کی صلاحیت اور اختیار رکھتے ہوں۔ ذرائع کا خیال ہے کہ وزیراعظم نواز شریف عسکری قیادت سے ممکنہ نئی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کریں گے تا کہ نئے امن عمل کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے ان کا موقف اور رائے حاصل کی جاسکے۔ اس بات پر اتفاق رائے پایا جاتا ہے کہ تنازع میں فوج حقیقی فریق ہے لہٰذا ان کے بھی ایک سینئر نمائندے کو مذاکراتی کمیٹی میں شامل کیا جانا چاہئے۔ حتیٰ کہ اس سے قبل بھی وزیراعظم قومی سلامتی امور سمیت ہر مرحلے پر اعلیٰ فوجی قیادت سے مسلسل مشاورت کرتے رہے، یہی وجہ ہےکہ سول اور فوجی قیادت طالبان سے مذاکرات کے حوالے سے یک رائے ہیں۔