Latest

تمہارے حسن کے نام

تمہارے حسن کے نام
سلام    لکھتا   ہے  شاعر  تمہارے  حسن  کے  نام
بکھر   گیا   جو  کبھی  رنگ   پیر  ہن     سرِ   بام
نکھر  گئی    ہے  کبھی  صبح   دوپہر  کبھی     شام
کہیں   جو   قامت  زیبا    پہ   سج  گئی   ہے   قبا
چمن   میں   سرو   صنوبر  سنور   گئے    ہیں    تمام
بنی   بساط   غزل    جب    ڈبو   لئے   دل    نے
تمہارے  سایہ  رخسار  و  لب   میں   ساغر  و   جام
سلام  لکھتا   ہے  شاعر  تمہارے  حسن  کے   نام
تمہارے   ہاتھ  پہ   ہے   تابشِ   حنا   جب  تک
جہاں   میں   باقی    ہے    دلداری   عروس     سخن
تہمارا  حسن   جواں   ہے   تو   مہراں   ہے     فلک
تہمارا   دم   ہے   تو   دمساز  ہے    ہوائے     وطن
اگرچہ  تنگ   ہیں   اوقات  ،  سخت   ہیں    آلام
تہماری      یاد  سے  شیریں    ہے  تلخی      ایام
سلام  لکھتا   ہے  شاعر   تہمارے حسن  کے   نام
فیض احمد فیض