Latest

عشق میں لاجواب ہیں ہم لوگ

عشق میں لاجواب ہیں ہم لوگ
حاضرعشق میں لاجواب ہیں ہم لوگ
ماہتاب، آفتاب ہیں ہم لوگ
ناز کرتی ہے، خانہ ویرانی
ایسے خانہ خراب  ہیں ہم لوگ
ہم پہ نازل ہوا صحیفہء عشق
صاحبانِ کتاب ہیں ہم لوگ
ہر حقیقت سے جو گزر جائیں
وہ صداقت مآب ہیں ہم لوگ
جب ملی آنکھ، ہوش کھو بیٹھے
کتنے حاضر جواب ہیں ہم لوگ
ہم سے پوچھوجگرؔ  کی سرمستی!
محرمِِ آنجناب ہیں ہم لوگ
جگرؔ مراد آبادی