Latest

مرا جی ہے جب تک ،تری جستجو ہے

مرا جی ہے جب تک ،تری جستجو ہے
مرا     جی    ہے    جب  تک  ،تری     جستجو    ہے
زبا ں جب تلک ہے ، یہی گفتگو ہے
تمنا      ہے        تیری   ،   اگر      ہے       تمنا
تری    آرزو      ہے     ،  اگر      آرزو      ہے
کیا     سیر    سب     ہم    نے     گلزار     دنیا
گل   دوستی   میں    عجب    رنگ    و     بو     ہے
خدا      جانے   کیا    ہوگا       انجام   اس     کا
میں بے    صبر  اتنا   ہوں    وہ    تند     خُو     ہے
غنیمت         ہے       یہ      دیدوادیدِ       یاراں
جہاں مند  گئی  آنکھ  ، میں     ہوں  نہ    تو       ہے
نظر میرے  دل  کی      پڑی      درد  کس       پر
جدھر  دیکھتا   ہوں       وہی       روبرو        ہے
خواجہ میردرد