Latest

میری بساط کیا ہے ۔ تب و تاب یک نفس

میری بساط کیا ہے ۔ تب و تاب یک نفس


میری بساط کیا ہے ۔ تب و تاب یک نفس

شعلے سے بے محل ہے الجھنا شرار کا
کر پہلے مجھ کو زندگی جاوداں عطا
پھر ذوق و شوق دیکھ دل بے قرا ر کا
کا نٹا وہ دے کہ جس کی کھٹک لازوال ہو
یا رب ، وہ در د جس کی کسک لازوال ہو!
دلوں کو مرکز مہر و وفا کر
حریم کبریا سے آشنا کر
جسے نان جویں بخشی ہے تو نے
اسے بازوئے حیدر بھی عطا کر
علامہ اقبال