Latest

نشاں یہی ہے زمانے میں زندہ قوموں کا

نشاں یہی ہے زمانے میں زندہ قوموں کا
نشاں  یہی   ہے   زمانے    میں   زندہ     قوموں   کا
کہ  صبح   و   شام    بدلتی   ہیں    ان   کی    تقدیریں
کمال   صدق    و   مرو ت    ہے    زندگی   ان    کی
معاف  کرتی   ہے   فطرت   بھی   ان   کی  تقصیریں
 ْؒ قلندرانہ ادائیں سکندرانہ جلال
یہ    ا متیں    ہیں     جہاں    میں    برہنہ    شمشیریں
خودی   سے   مرد   خود   آگاہ   کا     جمال   و  جلال
کہ   یہ    کتاب    ہے      باقی    تمام      تفسیریں
 شکوہ   عید    کا   منکر   نہیں   ہوں    میں      لیکن ؒ ٓ
قبول حق ہیں فقط مرد خر کی تکبیریں
حکیم     میری    نواؤں    کا    راز    کیا     جانے
ورائے   عقل    ہیں    اہلِ    جنوں   کی    تدبیریں
                                                                                  علامہ اقبال