Latest

ایشیا کپ کرکٹ، ریہرسل فائنل آج روایتی حریف پاکستان اور بھارت کے درمیان ہوگا

میرپور،ڈھاکا(جنگ نیوز)ایشیا کپ کرکٹ ٹورنامنٹ کے ریہر سل فائنل میں روایتی حریفوں پاکستان اور بھارت کا ٹکرائو اتوار کو میرپور کے شیر بنگلہ اسٹیڈیم میں ہورہا ہے۔میچ میں کامیابی حاصل کرنے والی ٹیم کے فائنل میں کوالی فائی کرنے کے امکانات روشن ہوجائیں گے۔دونوں ٹیمیں سری لنکا کے ہاتھوں شکست کا زخم سہہ چکی ہیں۔پاکستان کی بولنگ لائن بہت زیادہ مضبوط ہے جبکہ بھارت کو اپنی مضبوط بیٹنگ لائن کا ایڈوانٹیج ہے۔ پاکستان کے عمر اکمل ٹورنامنٹ میں زبردست فارم میں ہیں۔پاکستان اور بھارت کے درمیان کھیلا جانے والا یہ میچ پاکستانی وقت کے مطابق دن ایک بجے شروع ہوگا ۔ اس میچ میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کی قیادت مصباح الحق کریں گے جبکہ بھارتی ٹیم کی قیادت ویرات کوہلی کریں گے ۔بھارتی ٹیم کی کارکردگی زیادہ اچھی نہیں ہے۔گذشتہ 9 میں سے اس نے صرف ایک میچ جیتا ہے۔مارچ2012میں پاکستان نے اس گراونڈ پر بھارت کے خلاف میچ کھیلا تھا جس میں بھارت نے کامیابی حاصل کی تھی۔ کپتان مصباح الحق نے کہاہے کہ اب وہ ایشیا کپ میں بھارتی کرکٹ ٹیم کو شکست سے دوچار کریں گے ۔ کھلاڑی بھارت کا سامنا کرنے کے لیے پوری طرح تیار ہیں ۔ بھارتی کرکٹ ٹیم میں بہت سے اہم کھلاڑی شامل نہیں جس کا پاکستان کو بھر پور فائدہ ہوگا ۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہ قومی ٹیم پوری کوشش کرے گی کہ اس میچ میں کامیابی اپنے نام کرتے ہوئے قوم کو جیت کا تحفہ دیا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ اس حوالے سے پریشر ضرور ہے تاہم جو بھی ٹیم دبائو کا سامنا کرنے کی وہ جیتے گی ۔ انہوں نے کہاکہ ایشیا کپ میں بھارت کےخلاف کھیلے جانے والے میچ میں ہمیں اپنی غلطیوں پر قابو پانا ہوگا اور بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا ۔ بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان ویرات کوہلی نے کہاہے کہ پاکستان کے خلاف میچ کے لیے تیاری مکمل کرلی۔ کوشش ہوگی کہ پاکستان کے خلاف میچ میں کامیابی اپنے نام کی جائے ۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہاکہ ہمیں اس میچ کی اہمیت کا اندازہ ہے۔ ہماری پوری کوشش ہوگی کہ اس میچ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا جائے اور پاکستان کو شکست سے دوچار کیا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ اس میچ کے حوالے سے کھلاڑیوں کا مورال ہائی ہے اور وہ جیت کے جذبے کے ساتھ میدان میں اتریں گے ۔ دوسری جانب سے کرکٹ کے ماہرین کے مطابق یہ میچ ایشیا کپ کا سب سے دھماکا خیز میچ یہ ہوگا جس کو پاکستان اور بھارت کے کرڑوڑں شائقین کرکٹ اپنی اپنی ٹی وی اسکرینز پر دیکھیں گے ۔ اس میچ کے لیے تمام تر تیاریاں مکمل کی جا چکی ہیں اور ڈھاکا میں اسٹیڈیم کے اردگرد سخت خفاظتی اقدامات کیے گئے ہیں۔پیرکو ٹورنامنٹ میں افغانستان کا مقابلہ سری لنکا کے ساتھ ہوگا ۔ یہ میچ پاکستانی وقت کے مطابق دن ایک بجے جبکہ مقامی وقت کے مطابق دن دو بجے شروع ہوگا۔ ٹورنامنٹ میں کل 10میچ کھیلے جائیں گے۔ ہر ٹیم چار چار میچز کھیلے گی ۔ ٹورنامنٹ میں شرکت کرنے والی ٹیموں میں پاکستان سمیت، بھارت، سری لنکا، بنگلہ دیش اور افغانستان شامل ہیں۔ چار مارچ کو بنگلہ دیش پاکستان کا سامنا کرے گا ۔ پانچ مارچ کو افغانستان کا مقابلہ بھارت کے ساتھ ہوگا ۔ چھ مارچ کو بنگلہ دیش کا مقابلہ سری لنکا کے ساتھ ہوگا ۔ ٹورنامنٹ کا فائنل 8 مارچ کو کھیلا جائے گا ۔ مصباح الحق نے کہا کہ میں انتہائی پر اعتماد انداز میں بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت کے خلاف بہترین منصوبہ بندی کے ساتھ میدان میں اتریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ بنگلہ دیش روانگی سے قبل ہم نے طے کر رکھا ہے کہ کسی بھی ٹیم کو آسان حریف نہیں لیں گے اور اسی کے مطابق آگے بڑھ رہے ہیں ۔ گرین شرٹس کے قائد نے مزید کہا کہ یہ انتہائی مثبت ہے کہ کھلاڑی اپنی غلطیوں سے سیکھ رہے ہیں اور کارکردگی بھی دکھا رہے ہیں ۔ تمام کھلاڑی بھارت کے خلاف کارکردگی دکھانے کے لیے پرعزم ہیں ۔ پاکستان اور بھارت کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان اب تک 125 ایک روزہ میچز کھیلے گئے ۔ ان میں سے 50 میچز میں بھارت نے جبکہ 71 میں پاکستان نے کامیابی اپنے نام کی اور 4 میچز کا کوئی بھی نتیجہ نہ نکل سکا ۔ 125 میچز میں سے 30 بھارت میں کھیلے گئے ،27 میچز کی میزبانی پاکستان نے کی جبکہ 68 نیوٹرل وینو پر کھیلے گئے ۔


ایشیا کپ کرکٹ، ریہرسل فائنل آج روایتی حریف پاکستان اور بھارت کے درمیان ہوگا

میرپور،ڈھاکا(جنگ نیوز)ایشیا کپ کرکٹ ٹورنامنٹ کے ریہر سل فائنل میں روایتی حریفوں پاکستان اور بھارت کا ٹکرائو اتوار کو میرپور کے شیر بنگلہ اسٹیڈیم میں ہورہا ہے۔میچ میں کامیابی حاصل کرنے والی ٹیم کے فائنل میں کوالی فائی کرنے کے امکانات روشن ہوجائیں گے۔دونوں ٹیمیں سری لنکا کے ہاتھوں شکست کا زخم سہہ چکی ہیں۔پاکستان کی بولنگ لائن بہت زیادہ مضبوط ہے جبکہ بھارت کو اپنی مضبوط بیٹنگ لائن کا ایڈوانٹیج ہے۔ پاکستان کے عمر اکمل ٹورنامنٹ میں زبردست فارم میں ہیں۔پاکستان اور بھارت کے درمیان کھیلا جانے والا یہ میچ پاکستانی وقت کے مطابق دن ایک بجے شروع ہوگا ۔ اس میچ میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کی قیادت مصباح الحق کریں گے جبکہ بھارتی ٹیم کی قیادت ویرات کوہلی کریں گے ۔بھارتی ٹیم کی کارکردگی زیادہ اچھی نہیں ہے۔گذشتہ 9 میں سے اس نے صرف ایک میچ جیتا ہے۔مارچ2012میں پاکستان نے اس گراونڈ پر بھارت کے خلاف میچ کھیلا تھا جس میں بھارت نے کامیابی حاصل کی تھی۔ کپتان مصباح الحق نے کہاہے کہ اب وہ ایشیا کپ میں بھارتی کرکٹ ٹیم کو شکست سے دوچار کریں گے ۔ کھلاڑی بھارت کا سامنا کرنے کے لیے پوری طرح تیار ہیں ۔ بھارتی کرکٹ ٹیم میں بہت سے اہم کھلاڑی شامل نہیں جس کا پاکستان کو بھر پور فائدہ ہوگا ۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہ قومی ٹیم پوری کوشش کرے گی کہ اس میچ میں کامیابی اپنے نام کرتے ہوئے قوم کو جیت کا تحفہ دیا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ اس حوالے سے پریشر ضرور ہے تاہم جو بھی ٹیم دبائو کا سامنا کرنے کی وہ جیتے گی ۔ انہوں نے کہاکہ ایشیا کپ میں بھارت کےخلاف کھیلے جانے والے میچ میں ہمیں اپنی غلطیوں پر قابو پانا ہوگا اور بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا ۔ بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان ویرات کوہلی نے کہاہے کہ پاکستان کے خلاف میچ کے لیے تیاری مکمل کرلی۔ کوشش ہوگی کہ پاکستان کے خلاف میچ میں کامیابی اپنے نام کی جائے ۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہاکہ ہمیں اس میچ کی اہمیت کا اندازہ ہے۔ ہماری پوری کوشش ہوگی کہ اس میچ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا جائے اور پاکستان کو شکست سے دوچار کیا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ اس میچ کے حوالے سے کھلاڑیوں کا مورال ہائی ہے اور وہ جیت کے جذبے کے ساتھ میدان میں اتریں گے ۔ دوسری جانب سے کرکٹ کے ماہرین کے مطابق یہ میچ ایشیا کپ کا سب سے دھماکا خیز میچ یہ ہوگا جس کو پاکستان اور بھارت کے کرڑوڑں شائقین کرکٹ اپنی اپنی ٹی وی اسکرینز پر دیکھیں گے ۔ اس میچ کے لیے تمام تر تیاریاں مکمل کی جا چکی ہیں اور ڈھاکا میں اسٹیڈیم کے اردگرد سخت خفاظتی اقدامات کیے گئے ہیں۔پیرکو ٹورنامنٹ میں افغانستان کا مقابلہ سری لنکا کے ساتھ ہوگا ۔ یہ میچ پاکستانی وقت کے مطابق دن ایک بجے جبکہ مقامی وقت کے مطابق دن دو بجے شروع ہوگا۔ ٹورنامنٹ میں کل 10میچ کھیلے جائیں گے۔ ہر ٹیم چار چار میچز کھیلے گی ۔ ٹورنامنٹ میں شرکت کرنے والی ٹیموں میں پاکستان سمیت، بھارت، سری لنکا، بنگلہ دیش اور افغانستان شامل ہیں۔ چار مارچ کو بنگلہ دیش پاکستان کا سامنا کرے گا ۔ پانچ مارچ کو افغانستان کا مقابلہ بھارت کے ساتھ ہوگا ۔ چھ مارچ کو بنگلہ دیش کا مقابلہ سری لنکا کے ساتھ ہوگا ۔ ٹورنامنٹ کا فائنل 8 مارچ کو کھیلا جائے گا ۔ مصباح الحق نے کہا کہ میں انتہائی پر اعتماد انداز میں بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت کے خلاف بہترین منصوبہ بندی کے ساتھ میدان میں اتریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ بنگلہ دیش روانگی سے قبل ہم نے طے کر رکھا ہے کہ کسی بھی ٹیم کو آسان حریف نہیں لیں گے اور اسی کے مطابق آگے بڑھ رہے ہیں ۔ گرین شرٹس کے قائد نے مزید کہا کہ یہ انتہائی مثبت ہے کہ کھلاڑی اپنی غلطیوں سے سیکھ رہے ہیں اور کارکردگی بھی دکھا رہے ہیں ۔ تمام کھلاڑی بھارت کے خلاف کارکردگی دکھانے کے لیے پرعزم ہیں ۔ پاکستان اور بھارت کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان اب تک 125 ایک روزہ میچز کھیلے گئے ۔ ان میں سے 50 میچز میں بھارت نے جبکہ 71 میں پاکستان نے کامیابی اپنے نام کی اور 4 میچز کا کوئی بھی نتیجہ نہ نکل سکا ۔ 125 میچز میں سے 30 بھارت میں کھیلے گئے ،27 میچز کی میزبانی پاکستان نے کی جبکہ 68 نیوٹرل وینو پر کھیلے گئے ۔